روہنگیا جاگتا رہ

علی زیرک: روہنگیا جاگتا رہ ابھی اور بھی جسم ہیں جن کی گنتی دھندلکے سے پہلے کی لوحِ زماں پر رقم کر کے سونا ہے

تماشا

علی زیرک: ہمیں لجلجاتے چناروں سے آگے تساہل بھری کھیتیوں سے گزر کر فصیلوں کی فصلوں میں چھپنے سے پہلے دھوئیں کی لچکدار دیوار کو چاٹنا ہے

پُرسہ

علی زیرک: خبروں میں ان تابوتوں کی گنتی کرنا جن میں ٹھونکی جانے والی میخیں مریم کے بیٹے کے خون پہ اتراتی ہیں