Laaltain

Manto

منٹو ۲۰۱۲ء

سال ۲۰۱۲ء بھی گزر گیا۔ پچھلی صدی کو اس کے وسط میں منٹو جیسا تیسا چھوڑ گیا تھا، ویسی ہی تاریک رہی، اور آنے والی صدی کا پہلا عشرہ ہی ہم نے اس سے بھی زیادہ سیاہ اور تاریک تر بنا لیا۔ حبس پہلے سے سوا ہوتا گیا اور کھڑکیاں ہوا بند ہی رہیں۔ منٹو […]

سید اسد فاطمی میں ابھی تک عمر کے اس حصے سے باہر نہیں آیا جب پیٹ میں آٹھ پہر بھوک کی جگہ خواہشیں بھڑکتی ہیں اور دسترخوانوں پر گرم کھاجوں کی بجائے خوابوں کی ہفت خواں سجا کر کھائی جاتی ہے۔ لیکن چار سال پہلے کی بات اور تھی، تب خواب پروری کے معاملے میں […]

لوک کہانیاں کسی بھی تہذیب کی اپنی ثقافت، روزمرہ کے رہن سہن اور عام لوگوں کی خواہشوں، اندیشوں اور خیالوں کی ترجمان ہوتی ہیں۔ اب بھی بہت سے گھر کے بزرگ اپنے بچوں کو سونے سے پہلے اس طرح کی لوک کہانیاں سناتے ہیں اور کہانی نسل در نسل تعمیر ہوتی رہتی ہے۔ یہ کہانیاں […]

خیال و شعر کی دنیا میں جان تھی جن سے فضائے فکر و عمل ارغوان تھی جن سے وہ جن کے نور سے شاداب تھے مہ و انجم جنون عشق کی ہمت جوان تھی جن سے وہ آرزوئیں کہاں سو گئی ہیں میرے ندیم فیض جو برصغیر کے ترقی پسند ادب کا سب سے معتبر […]

نام کتاب: کائناتی گرد میں عریاں شام (نظمیں) مصنف: زاہد امروز صفحات: ۱۱۰ قیمت: ۲۰۰ روپے ناشر: سانجھ پبلیکیشنز، ۴۶/۲ مزنگ روڈ، لاہور اردو شاعری کے لیے یہ بات ایک نیک شگون ہے کہ شعراء کی نئی پود کافی حد تک غزل بمقابلہ نظم کے “موازنہ٫ انیس و دبیر” سے باہر آ گئی ہے اور […]

نام کتاب: دخترِ وزیر مصنفہ: ڈاکٹر للیاس ہملٹن / مترجم: پروفیسر اشفاق بخاری صفحات: 176 ناشر: سانجھ پبلشر، لاہور ہزارہ برادری افغانستان، ایران و ترکستان کے علاوہ پاکستان کی ایک اہم نسلی و ثقافتی اکائی ہے، لیکن ہزارہ تاریخ و ثقافت پر اردو زبان میں دستیاب کتب و مواد بالکل ناکافی معلوم ہوتا ہے۔ زیر […]

نام کتاب: سرخ میرا نام (My Name is Red) مصنف: اورحان پاموک (ترجمہ: ہما انور) صفحات: 456 قیمت: 780 ناشر: جمہوری پبلیکیشنز، 2 ایوان تجارت روڈ، لاہور پچھلے قرنوں کے جو احوال ہم تک پہنچتے ہیں، جسے ہم تاریخ کہتے ہیں، پہلی نظر میں ہمیں جنگاہوں میں مرنے مارنے والوں کے معرکوں کے ایک نقشے، […]

ہاں مجھے اتنی خبر ہے مرے ہمدم مرے دوست زندگی اپنی جگہ مہمل و دشوار سہی کوئی دلجو ہو تو سو بار گزر سکتی ہے چاہِ نکبت میں بھی اس طور گزاری جائے بسترِ عیش پہ جیسے پسرِ شاہ کا خواب اک عصا ماریں تو یوں پھوٹ بہے جوئے شراب جنبشِ چشم پہ بجنے لگیں […]

ریگ مال سلسلے کی بقیہ کہانیاں پڑھنے کے لیے کلک کیجیے۔ جن دنوں میں وہاں گیا تھا، شہری آبادی سے کوئی پکی سڑک بستی کیران کی طرف نہیں جاتی تھی۔ ریل گاڑی صوبے کے آخری کونے پر واقع ایک کم آباد ضلعے کے چھوٹے سے اسٹیشن پر اتار کر مشرق کو مڑ جاتی ہے۔ اسٹیشن […]

ریگ مال سلسلے کی بقیہ کہانیاں پڑھنے کے لیے کلک کیجیے۔ علماء کی یہ مجلس ثقلی مابعدالطبعیات پر اب تک حاصل کیا گیا تمام علمی ورثہ کھنگال چکی ہے اور چند ہزار جدول، نقشے اور خاکے منتخب کیے جا چکے ہیں تاکہ اس نئے مسئلے کا کوئی حل ڈھونڈا جا سکے۔ حاضرینِ مجلس کے غیر […]